سلاجیت ذیابیطس کے مریضوں کے لیے موئثر دوا

Salajeet ka istimaal sugar ki marizon keleye

"سلاجیت "ذیابیطس کے مریضوں کے لیے موئثر دوا جان ہے تو جہان ہے یہ بات صدیوں سے ہماری سماعت سے ٹکڑا رہی ہے ۔ موجودہ دور میں لوگوں کی خوراک، ماحول اور رہن سہن مکمل تبدیل ہو چکا ہے آج ہر دوسرے دن ہم کسی نہ کسی مرض میں مبتلا ہوجاتے ہیں جس کی سب سے بڑی وجہ ماحولیاتی آلودگی اور ہر چھوٹی سی چھوٹی بات پر ٹینشن لینے کا عمل ہے جس کے باعث ہونے والی بیماری کا علم ہمیں وقتی طور پر تو محسوس نہیں ہوتا لیکن آگے چل کر وہی سبب بہت بڑی بیماری کی شکل اختیار کرلیتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آج نئی نئی بیماریاں جنم لے رہی ہیں اور وہ بیماریاں جن کا نام پہلے پہل کبھی کبھار سننے  میں آتا تھا لیکن آج ہر دوسرا شخص اُن بیماریوں کا شکار ہے انہی میں سے ایک ذیابیطس بھی ہے۔ جسم میں انسولین کی کمی یا جسم خاص مقدار میں انسولین پیدا نہ کرپائے یہ عمل ذیابیطس کے مرض میں مبتلا کرتا ہے ۔یوں تو شوگر کو مکمل طور پر ختم کرنے کا علاج ابھی تک دریافت نہیں ہوسکا لیکن شوگر لیول کو کنٹرول کر کے اس بیماری پر قابو پایا جاسکتا ہے ۔ذیابیطس کے مریض کے خون میں ایسی کیمیائی تبدیلیاں رونما ہوتی ہیں جس کے باعث شوگر کی مقدار انتہائی بڑھ جاتی ہے یا پھر پیشاب کے ذریعے خارج ہونے لگتی ہے۔ قدرتی طور پر شوگر لیول پر قابو پانے کے لیے کئی نسخے بتائے جاتے ہیں جن میں مفید ترین علاج سلاجیت کا استعمال ہے جو نہ صرف  شوگر لیول کو کنٹرول کرتا ہے بلکہ شوگر کے مریضوں کی صحت کو بھی برقرار رکھتا ہے۔  سلاجیت کے لفظی معنی"پتھر کی جان " ہے ۔یہ گلگت بلتستان یعنی شمالی پاکستان کے پہاڑوں میں پایا جانے والا مادہ ہے اس کا رنگ سیاہ مائل تارکول کی طرح ہوتا ہے ، جس میں نامیاتی و ارضی اجزاء اور نباتاتی ریشے پائے جاتے ہیں۔ سلاجیت کے بے تحاشا فوائد ہیں جو مختلف قسم کے امراضِ علاج کے لیے استعمال کیے جاتے ہیں بالخصوص شوگر کے مریضوں کے لیے مفید ہربل پروڈکٹ مانی جاتی ہے۔ سلاجیت پیشاب کے ذریعے اس شخص کے جسم سے زہریلے کیمیکلزکو خارج کرتا ہے ساتھ ہی لبلبہ کی قوت میں اضافہ کرتا ہے تاکہ جسم خود کفیل ہو  کرقدرتی انسولین پیدا کرسکے۔ سلاجیت میں موجود فولویک ایسڈ اینٹی-ذیابیطس کا کردار ادا کرتا ہے کیونکہ یہ لبلبہ کے سبب جسم میں ہونے والے نقصانات میں کمی کرتا ہے بلکہ یہ کہنا بجا ہوگا کہ سلاجیت ذیابیطس کے مریضوں کے لیے توانائی بھرے کیپسول کے متعرادف ہے۔ یہ خون کے بہاؤ میں شوگر کی  مقدار اور لبلبہ کے محرکات پر موئثر طریقے سے اثرانداز ہو کر گلوکوز کے تحول میں تیزی پیدا کرتا ہے ۔ دنیا بھر کے سانئس دان ذیابیطس کے مریضوں کے لیے سلاجیت کے اینٹی بائیوٹک اثرات پر مشاہدات کر رہے ہیں۔ ایکسپرٹ ڈاکٹرز بھی شوگر کے مریضوں کے لیے سلاجیت کے استعمال کا مشورے دیتے ہیں کیونکہ یہ خون کے بہاؤ میں شوگر کے لیول کو کنٹرول کرنے میں قدرتی طور پر مدد دیتا ہے اور یوں سلاجیت کے ذریعے جسم کو نئی توانائی ملتی ہے ساتھ ہی جسم کا اعصابی نظام بھی برقرار رہتا ہے اور جلد مریض  کو نئی زندگی کا احساس ہونے لگتا ہے

سلاجیت اورشو گر    ذ یا بطیس تر قی پذ یر اور تر قی یا فتہ مما لک میں ایک گھمبیر مسلئہ ہے جو کہ مو ت کا با عث بھی بن سکتا ہے۔ اس مر ض میں لبلبہ انسو لین بنانا کم یا بند کر دیتا ہے جو کہ جسم میںشو گر کی تو ڑ پھو ڑکے لیئے ایک ضر و ر ی عنصرہے۔ خو ن میںشو گرکی مقدار بڑھ جا نے سے کو لیسٹر ول (چکنا ئی) کی مقدا ر میں بھی ا ضا فہ ہو جا تا  ہے جو کہ خو ن کے گا ڑ ھے پن‘ مو ٹا پا‘ جوڑوں کے شد ید درد ‘  بلڈ پر یشر کا بڑھنا اور دل کی بے شما ر بیما ر یو ں  خصو صا دل کے دور ے (heart attack) کی وجہ بن سکتا ہے۔ ا یلو پیتھی میںشو گرکے علا ج کی بے شما ر ادویا ت مو جو د ہیں لیکن ان کے جسم کے دو سرے حصو ں پر بہت سے مضر اثر ات بھی ہیں۔ یو نا نی ا د و یا ت میں سلاجیت قر اقر م اور ہما لیہ کے پہا ڑوں سے نکلنے والا   ایک طا قتور ٹا نک ہے ۔   اس میں پا ئے جا نے والے عنا صر میں معد نیا ت‘  شحمیا ت ‘ دھا تی عنا صر خا ص کر Fe  ‘Co ‘Zn  اور  Ca ‘  3,8-oxygenated dibenzo-.alpha.-pyrone ‘   fulvic acid  اور humic acid  وہ  قد ر تی  اجزاء  ہیں جو  لبلبہ کی سر گر میو ں  میں ا ضا فہ کر تے  ہیں‘ خو ن میں انسو لین کی مقدار بڑھاتے ہیں اور free radicals کو قا بو کر کے anti-oxidant  کا کردار بھی ادا  کر تے ہیں۔   lipid profile  جیسے خو ن میں کو لیسٹر ول کی مقدا ر میںکمی کر تے ہیں او ر وزن میںکمی کا باعث بنتے ہیں۔ اس لیئے سلاجیت دو سر ے عضو ں کو نقصا ن پہنچا ئے بغیر ذ یا بطیس اور اس سے منسلک تما م بیما ر یو ں کے علا ج کے لیئے ایک بیش قیمت دوا ہے ۔  یہ جڑی بوٹی جسما نی اور ز ہنی طا قت کو بڑھا کر جسم کی بیما ر یو ں کے خلا ف طا قت میں خا طر خوا ہ ا ضا فہ کر تی ہے او ر ‘‘ با ڈی ٹو نر ‘‘ کے نام سے  جا نی جا تی ہے۔

Salajeet sugar keleye, sugar ki waja se jinsi kamzori ki dawai